کیلے کے چھلکے پھینکیں نہیں کیونکہ اس کے جادوئی فوائد جان کر آپ بھی اس کہ

کیلے

پی ایف سی نیوز ! کیلا ہماری صحت کے لئے بےحد ضروری ہے کیونکہ اس میں وٹامن بی-6، بی-12، وٹامن سی، آئرن فائبر، میگنیشئیم، پوٹاشئیم اور ایتھائلین پایا جاتا ہے جو کہ ہماری جملہ امراض بیماریوں بلکہ جلد کے لئے بھی بہت مفید ہیں۔ کیلے کھانے کے بعد ہم چھلکوں کو پھینک دیتے ہیں لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ کیلے کے چھلکوں میں ہماری خوبصورتی اور صحت کے کتنے اہم راز چھپے ہوئے ہیں۔

ایکنی ہوجائے تو کیلے کے چھلکے کو اندر کی طرف سے منہ پر رگڑیں اس سے آپ ایکنی پر کنٹرول پاسکتے ہیں۔ چہرے پر نشانات پڑ گئے ہیں تو کیلا کھا کر چھلکے کو منہ پر رگڑ لیں نشانات بھی مستقل استعمال سے کنٹرول ہوجائیں گے۔ آنکھوں کے گرد کالے گھیرے آگئے ہیں تو کیلے کے چھلکے کو پیس کر ایلویرا جیل میں ملائیں اور آنکھوں کے گرد لگالیں آپ کی یہ تکلیف بھی بھاگ جائے گی۔ دانتوں پر جمی پیلاہٹ کو ہٹانے کے لئے ہفتے میں دو سے تین مرتبہ کیلے کے چھلکے کو دانتوں پر پانچ سیکنڈ تک رگڑ کر پانی سے دھو لیں آپ کے دانت چمکتے نظر آئیں گے۔ چہرے کے داغ دھبے اور جھریوں پر چھلکے کو رگڑنے سے آپ کی جھریاں کنٹرول میں آسکتی ہیں۔ کیلے کے چھلکے میں سٹرک ایسڈ اور جراثیم کش خصوصیات پائی جاتی ہیں جس کی وجہ سے یہ خارش اور الرجی کی جگہ پر مسلنے سے فائدہ دیتا ہے۔

کھانے کے بعد صرف چٹکی بھر سونف اور سبز الائچی ملا کر کھائيں اور صحت کے ان سنگین مسائل سے نجات میں مدد حاصل کریں

انسانی جسم ایک مشین کی مانند ہے جس کے تمام اعضا اپنے اپنے افعال اگر درست طریقے سے انجام دیں تو اس سے صحت درست رہ سکتی ہے مگر اس میں سے کسی بھی حصے میں خرابی صحت کے بڑے مسائل کا سبب ہو سکتی ہے- انسان کے پورے جسم میں معدے کی اہمیت سب سے زیادہ قرار دی جاتی ہے اور اس میں ہونے والی معمولی سی خرابی بھی بڑے مسائل کا پیش خیمہ ہوتی ہے- سونف اور سبز الائچی کا شمار ہم جن کا استعمال معدے کے جملہ مسائل کے لیۓ بہت مفید ثابت ہو سکتا ہے- کھانا کھانے کے بعد روزانہ اگر چٹکی بھر سونف کے ساتھ ایک سبز الائچی کو چبا کر کھا لیا جائے تو وہ صحت کے لیے کئی حوالوں سے بہت مفید ثابت ہو سکتے ہیں- بعض افراد اگر ان کو چبا کر کھا نہ سکیں تو وہ اسکا قہوہ بنا کر بھی پی سکتے ہیں جس کے لیے ایک کپ پانی میں چٹکی بھر سونف کو اچھی طرح ابال لیں اور سبز الائچی کو پیس کر شامل کر دیں حسب ذائقہ چینی شامل کر کے بھی پیا جا سکتا ہے-

ان دونوں چیزوں کے استعمال سے صحت کو جو فائدے ملتے ہیں وہ کچھ اس طرح ہیں:سونف اور سبز الائچی کا استعمال کھانے کے بعد جسم میں بطور ڈیٹوکس کام کرتا ہے اور اس سے جسم کے اندر موجود زہریلے مادوں کا اخراج ہوتا ہے- آنتوں کی صفائی ہوتی ہے جگر کے اندر موجود زہریلے مادوں کو بھی خارج کر کے اس کے افعال میں بہتری لاتا ہے جس سے کھانا تیزی سے ہضم ہوتا ہے اور تازہ خون بنتا ہے-سونف اور الائچی کو ملا کر استعمال کرنے سے معدہ طاقت حاصل کرتا ہے معدے میں موجود تیزابیت کے سبب معدے میں فاضل گیس بنتی ہے جو تکلیف کا سبب ہوتی ہے- اس کے استعمال سے گیس کا خاتمہ ہوتا ہے اور معدے کی تیزابیت بھی ختم ہوتی ہے- اس حوالے سے یہ معدے کے السر کے مریضوں کے لیے بہت مفید ہوتی ہے

قبض کا مرض درحقیقت جسم کی بہت ساری بڑی بیماریوں کا آغاز ہوتا ہے اور کھانے کے بعد سونف اور الائچی کے استعمال سے پرانی سے پرانی قبض کا خاتمہ ہوتا ہے اور ہاضمے کے عمل میں درستگی آتی ہے اس کے ساتھ ساتھ ان کا استعمال قبض کو ہونے سے بھی روکتا ہے-اگر آپ کا وزں زیادہ ہے اور آپ اپنے پیٹ پر موجود چربی کو لے کر پریشان ہیں تو اس حوالے سے یہ آپ کے لیے بہترین ثابت ہو سکتا ہے کیوں کہ ان کا استعمال جسم کے میٹا بولزم ریٹ کو بڑھا دیتا ہے جس کے سبب جسم کی فاضل چربی تیزي سے پگھلنا شروع ہو جاتی ہے اور یہ مزيد چربی کو جمنے سے بھی روکتا ہے-سونف اور سبز الائچی کو ملا کر کھانے سے خون میں موجود خطرناک کولیسٹرول کی شرح تیزي سے کم ہوتی ہے-اس کے ساتھ ساتھ یہ خون کی شریانوں میں جمی چکنائی کو بھی صاف کرتا ہے جس سے دل کے دورے کے خطرے میں کمی واقع ہوتی ہے اور جسم چاک و چوبند رہتا ہے- ارے باورچی خانے میں موجود ان جڑی بوٹیوں میں ہوتا ہے

Leave a Comment