والد نے 13 سالہ بیٹی 60 سالہ شخص کو فروخت کر دی،جانیں کیوں؟

بیٹی فروخت

سنگدل والد کی جانب سے پیسوں کیلئے بیٹی فروخت کے معاملے پر توجہ دلائو نوٹس پنجاب اسمبلی سیکرٹریٹ میں جمع کر ادیا۔سعدیہ تیمور کی جانب سے جمع کرائے گئے نوٹس کے متن میں کہا گیا ہے کہ صوبائی دارالحکومت لاہور میں والد نے ساڑھے تین لاکھ کے عوض 13سالہ بیٹی 60سال کی عمر کے شخص کو فروخت کردی ہے، مغلپورہ تھانے کا اے ایس آئی مقدمہ درج کرنے کیلئے بچی کی والدہ سے ناجائز مطالبہ کررہا ہے،کیا پولیس نے اس افسوسناک واقعہ کا مقدمہ درج کرلیا ہے ، ملزمان کی گرفتاری عمل میں لائی گئیہے اور کیس کی اب تک کی تفتیش کے متعلق ایوان کو تفصیل سے آگاہ کیا جائے۔ دوسری جانب ایڈیشنل سیشن جج سرگودھا خالد وزیر نے مبینہ پولیس مقابلے کے مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے ملزمان کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے بری کردیا،زرائع کے مطابق سرگودھا کے نواحی تھانہ ترکھان والا پولیس نے مئی 2020 ء میں ملزمان ثقلین، مظہر، صفدر، چنگیز خان، ولید الحسن، ساجد اور عمران کے خلاف قتل کی دفعات زیر دفعہ 302، 324، 186، 353 کے تحت مقدمہ درج کیا تھا۔ پولیس استغاثہ کے مطابق ملزمان قتل کے متعدد مقدمات میں پولیس کو مطلوب تھے۔ خفیہ اطلاع پر ساہیوال کے قریب ایک گاؤں میں پولیس نے چھاپہ مارا تو مبینہ پولیس ہو گا۔ اورفائرنگ تبادلہ میں ملزمان کی اپنی فائرنگ سے ان کااپنا ساتھی نجیب اللہ جانبحق ہو گیا۔ جس ملزمان کی طرف سے عدالت میں موقف اختیار کیا گیاکہ تھانہ ترکھان والا وقوعہ کو پولیس مقابلہ بنانے میں ناکام رہی ہے۔ جس نے مقتول نجیب اللہ کو نہ صرف تشدد کر کے ہلاک کیا بلکہ اس کی نعش پر گولیاں برسائیں۔فاضل عدالت کے جج خالد وزیر نے فیصلہ سناتے مقدمہ میں ملوث تمام ملزمان کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے بری کردیااور اختیار دیا گیاکہ اگر وہ پولیس کے خلاف کوئی کاروائی کرنا چاہیں تو کرسکتے ہیں

Leave a Comment