کیا آپ کو پتہ ہے!خانہ کعبہ کے گرد سات چکر کیوں لگائے جاتے ہیں ؟مزید جانیں

خانہ کعبہ

پی ایف سی نیوز ! جونہی باب الفتح یا کسی اور دروازے سے گزر کر آپ حرم کے اندر داخل ہوتے ہیں سامنے سے اندر نظر پڑتی ہے۔ جھروکوں سے سوہنے کے گھر کا ہلکا سا دیدار ہوتا ہے۔ تو دل کی جو کیفیت ہوتی ہے وہ بیان سے باہر ہے۔ پتھر سے پتھر دل بھی موم ہو جاتا ہے اور کفر پاش پاش ہو جاتا ہے۔

ہم خراماں خراماں ہجوم سے راستہ بناتے آگے پہنچے تو سارے پردے ایک دم وا ہو گئے۔ جونہی باب الفتح یا کسی اور دروازے سے گزر کر آپ حرم کے اندر داخل ہوتے ہیں سامنے سے اندر نظر پڑتی ہے۔ جھروکوں سے سوہنے کے گھر کا ہلکا سا دیدار ہوتا ہے۔ تو دل کی جو کیفیت ہوتی ہے وہ بیان سے باہر ہے۔ پتھر سے پتھر دل بھی موم ہو جاتا ہے اور کفر پاش پاش ہو جاتا ہے۔ ہم خراماں خراماں ہجوم سے راستہ بناتے آگے پہنچے تو سارے پردے ایک دم وا ہو گئے۔ عیدین کی تکبیریں سات ہیں اور سات برس کی عمر میں بچوں کو نماز پڑھنے کی ترغیب دلانے کا حکم ہوا ہے۔ روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اپنے مرض میں سات مشکیزہ پانی سے غسل کرانے کے لیے فرمایا۔ اللہ نے قوم عاد پر طوفانِ باد وباراں سات رات تک جاری رکھا۔

اللہ نے صدقہ کے ثواب کوسات بالیوں سے جو ایک دانہ سے اگتی ہیں جن میں سو سو دانے ہیں سے تشبیہ دی ہے اورصدقہ کا اجر سات سو گنا تک اور اس سے بھی زائد سات کے ضرب کے ساتھ ملے گا۔جب حضرت یوسفؑ قید میں تھے تو بادشاہ نے کہا ’’میں نے خواب میں دیکھا ہے کہ سات موٹی تازی فربہ گائیں ہیں جن کو سات لاغر دبلی پتلی گائیں کھا رہی ہیںاور سات بالیاں ہیں ہری ہری اور دوسری سات سوکھی ہوئیں اور بالکل خشک‘‘ (القرآن: یوسف44) جس برتن میں کتا منہ ڈالے اسے کم از کم سات مرتبہ دھویا جائے جن میں سے ایک مرتبہ مٹی سے۔ اونٹ کی قربانی میں سات حصہ دار ہو سکتے ہیں اسی طرح گائے کی قربانی میں سات حصہ دار ہو سکتے ہیں۔ نمازیں بھی سات ہیں پانچ نمازیں فرض ہیں اور دو نمازیں نفل جن میں تہجد اور اشراق کی نماز شامل ہے۔

حضرت سلیمانؑ کی مہر سات نوکدار ستاروں کی شکل میں تھی۔ اس کے علاوہ سات کے ہندسہ میں حکمت بھی ہے، فلسفہ بھی ہے، جسے اللہ ہی بہتر جانتا ہے

Leave a Comment